Main Site aawsat.com/urdu

اتحاد کی طرف سے داعش کے فرانسیسی ماسٹر مائنڈ کا نشانہ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: اتوار, 12 فروری, 2017
0

اتحاد کی طرف سے داعش کے فرانسیسی ماسٹر مائنڈ کا نشانہ

4

لیڈر خالد شروف

لندن ­ سڈنی: "الشرق الاوسط”

        ریاستہائے متحدہ امریکہ کی قیادت میں بین الاقوامی اتحاد نے اعلان کیا ہے کہ اس نے تنظیم داعش میں فرانسیسی لیڈر رشید قاسم کو موصل کے قریب ایک فضائی حملہ میں نشانہ بنایا ہے لیکن اتحاد نے اس کے قتل ہونے کی تصدیق نہیں کی ہے اور اس نے یہ بھی اشارہ کیا ہے کہ فضائی حملہ کے نتائج کے جاننے کے فورا بعد تمام تفصیلات نشر کرے گا۔

        اتحاد کو شک ہے کہ 13 جولائی کو ایفلین کے علاقہ کے مانیانفیل میں ایک پولس اور اس کی اہلیہ کے قتل اور 26  جولائی کو سین ماریٹیم کے علاقہ میں سانٹ اٹیان ڈو روفری کے چرچ میں ایک پادری کے ذبح کئے جانے کا براہ راست ذمہ دار قاسم ہی ہے۔ اسی طرح قاسم انٹر نیٹ کے ذریعہ کئے جانے والے داعش کے حملوں کا ماسٹر مائنڈ تھا۔

        دوسری طرف داعش میں شامل خالد شروف نامی ایک لبنانی دہشت پسند کے سلسلہ میں خبر ملی ہے اور اسٹریلیا نے اس کی نیشنلیٹی ختم کر دی ہے۔ اس کی عمر 35 سال ہے۔ اس نے 2013  میں اسٹریلیا چھوڑ کر شام کی طرف روانہ ہو گیا تھا۔ داعش میں شامل ہونے سے پہلے وہ اپنے ملک سے اپنے بھائی کا پاسپورٹ استعمال کر کے فرار ہوا تھا اسی وجہ سے اس کے پاس دو ملک اسٹریلیا اور لبنان کی نیشنلیٹی ہو تھی۔ اس نے اس سے قبل سنہ 2014  میں اپنے سات سال کے بیٹے کی تصویر نشر کی تھی جس میں وہ ایک شامی سرکاری ذمہ دار کے کٹے ہوئے سر کو اٹھائے ہوئے تھا۔

اتوار 16 جمادی الاول 1438ہجری – 12 فروری 2017 شمارہ نمبر {13956}

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>