Main Site aawsat.com/urdu

جدہ میں 16 دہشت گرد عناصر گرفتار، جن میں 13 پاکستانی اور 3 سعودی - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: بدھ, 25 جنوری, 2017
0

جدہ میں 16 دہشت گرد عناصر گرفتار، جن میں 13 پاکستانی اور 3 سعودی

بدھ ­ 27 ربيع الثانی 1438 ہجری ­ 25 جنوری  2017 ء  شمارہ:  (13938)
e67ehhjhjhkk,9ppliolol

پاکستانی فاطمہ مراد (واس)   سعودی حسام الجهمني (واس)   سعودي خالد السروانی (واس)   پاکستانی عبد الرحمن بلوچی (واس)   جدہ میں دہشت گردوں کے قبضہ سے برآمد شدہ ہتھیار، دھماکہ خیز مواد اور دیگر سامان (واس)

 

رياض: نايف الرشيد

      کل سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے نئی خفیہ جماعتوں کے بارے انکشاف کیا ہے جو کہ "جدہ عناصر” سے منسلک ہیں، جن کے خلاف گذشتہ ہفتہ کے روز سیکورٹی فورس کی کاروائی کی گئی، یاد رہے کہ اس دوران دو خودکش بمباروں نے اپنے آپ کو دھماکہ سے اڑا لیا تھا، یہ خالد غازی حسین السروانی اور نادی مرزوق خلف الضیانی عنزی دونوں سعودی شہریت کے حامل تھے۔

     وزارت نے سیکورٹی کے ترجمان کے ذریعے مزید کہا کہ اس کیس میں اب تک 16 افراد کو گرفتار کیا گیا ہے، جن میں تین سعودی شہریت کے حامل ہیں جبکہ باقیوں کی شہریت پاکستانی ہے۔ نشاندہی کی گئی ہے کہ خود کش حملہ آور السروانی نے دہشت گردانہ حملے کے مرتکب افراد کو حمایت اور مدد فراہم کی، جس نے عسیر کے علاقے میں ہنگامی افواج کی مسجد میں نمازیوں کو نشانہ بنایا اور اسی طرح خود کش حملہ آور نے نجران کے علاقے میں المشہد مسجد میں دہشت گردانہ حملہ کیا۔ اس کے علاوہ وہ الحرازات محلہ میں واقع دھماکہ خیز بیلٹ اور دھماکہ خیز مواد بنانے والے مینوفیکچرنگ پلانٹ میں بھی ملوث تھا۔ اسی طرح المضیانی بھی دہشت گردانہ کاروائیوں میں ملوث تھا۔

      سیکورٹی افراد نے خود کش افراد سے بھاری مقدار میں کیمیائی مواد کا ذخیرہ اپنے قبضہ میں لے لیا، جس میں دستی بم بنانے، بندوق کی گولیاں بنانے اور  دھماکہ خیز مواد بنانے میں استعمال ہونے والا مواد شامل ہے۔

      اس معاملے کے ماسٹر مائنڈ حسام الجہنی نے اعتراف کیا کہ بیرون ملک دہشت گرد تنظیم داعش کی ہدایت پر انہوں نے رہائش گاہ کو کرایہ پر لیا جو کہ خود کش حملہ آوروں کی پناہ گاہ تھی۔ یہ خود کش حملہ آور خواتین کے بھیس میں گورنریٹ جدہ کی شاہراہ قریش میں واقع ایک ٹھکانے سے یہاں منتقل ہوئے پھر انہیں یہاں (دھماکہ خیز) تمام ضروری سامان فراہم کیا گیا۔

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>